FREE DELIVERY PAKISTAN

Hazrat Ishaq (P.B.U.H)

قرآن مجید میں حضرت اسحاق علیہ السلام کا ذکر مبارک سترہ (17) مرتبہ آیا ہے، جس کی تفصیل درج ذیل ہے:

حضرت اسحاق علیہ السلام ‘ حضرت ابراہیم علیہ السلام کے صاحبزادے تھے اور ان کی پہلی بیوی سارہؓ کے بطن سے پیدا ہوئے، جب حضرت ابراہیمعلیہ السلام کی عمر سو سال کی ہوئی تو اللہ تعالیٰ نے ان کو بشارت سنائی کہ سارہ کے بطن سے بھی تیرا ایک بیٹا ہوگا۔

’’اسحاق‘‘ اصل تلفظ کے اعتبار سے ’’یصحق‘‘ ہے، یہ عبرانی کا لفظ ہے جس کا ترجمہ عربی میں ’’یضحک‘‘ ہے یعنی ہنستا ہے، اللہ کے فرشتوں نے جب حضرت ا براہیم علیہ السلام کو سو سال اور حضرت سارہؓ کو نوے سال کی عمر میں بیٹا ہونے کی بشارت دی تو حضرت سارہؓ کو یہ سن کر تعجب سے ہنسی آگئی، اس لیے ان کا یہ نام تجویز ہوگیا، یا ان کی پیدائش حضرت سارہؓ کے لیے خوشی اور شادمانی کا باعث ہوئی، اس لیے یہ نام رکھا گیا۔

حضرت اسحاق علیہ السلام ‘ حضرت اسماعیل علیہ السلام سے 13 سال چھوٹے تھے ، آپ فلسطین کے شہر الخلیل (حبرون) کے مقام پر پیدا ہوئے۔ جب حضرت اسحاق علیہ السلام آٹھ دن کے ہوئے تو ابراہیمعلیہ السلام نے ان کا ختنہ کرایا، اورحضرت اسحاقعلیہ السلام کی شادی ابراہیم علیہ السلام نے اپنے آباء واجداد کی نسل میں سے کرائی، آپ کی زوجہ کا تعلق فدان آرام سے تھا ، فدان آرام کا علاقہ حران کے نواح میں واقع ہے۔ آپ کی بیوی کا نام ’’ربقہ‘‘ تھا۔

اس سے حضرت اسحاق علیہ السلام کے دو بیٹے ’’عیسو‘‘ اور ’’یعقوب‘‘ پیدا ہوئے ،اس وقت حضرت اسحاق علیہ السلام کی عمر 60 سال تھی، حضرت اسحاق علیہ السلام کے دوسرے بیٹے ’’یعقوب‘‘ اللہ کے نبی تھے، اور ان کی اولاد ’’بنی اسرائیل‘‘ کہلائی، ان کے بڑے بیٹے کا نام یہودا ہے، ان کی نسبت سے بنی اسرائیل کو یہود بھی کہا جاتا ہے۔

حضرت اسحاق علیہ السلام   180 برس کی عمر میں فوت ہوئے، اور الخلیل یعنی حبرون شہر میں فوت ہوئے اور وہیں ’’مکفیلہ‘‘ غار میں مدفون ہوئے۔