FREE DELIVERY PAKISTAN

Al-Madinat

قرآن مجید میں مدینہ کاذکر چودہ (14)مرتبہ ہے، جس کی تفصیل درج ذیل ہے:
مدینہ سے مراد شہر، اور کبھی یہ ملک اور بستی کے معنی میں بھی استعمال ہوتا ہے، اس کو اگر مطلق بولا جائے تو اس سے مدینۃ الرسول (a) یعنی مدینہ منورہ مراد ہوتا ہے۔ مدینہ منورہ ، مکہ مکرمہ سے تین سو میل کے فاصلہ پر واقع ہے۔ اس کے شمال میں جبلِ احد اور جنوب میں جبلِ عیر ہیں، یہ دونوں مدینہ سے چار چار کلومیٹر کے فاصلہ پر ہیں۔ مدینہ منورہ میں چوبیس سے زیادہ پانی کے چشمے ہیں۔ یہاں کا پانی ہلکا، سرد اور شیریں ہے۔ شہر کی آب و ہوا گرمیوں میں سخت گرم اور سردیوں میں سخت سرد ہوتی ہے۔ یہاں کھجور اور انگور کے باغ کثرت سے ہیں۔ آپ aنے یہاں ہجرت کی، یہاں کے مسلمانوں نے انہیں پناہ دی اور انصار کہلائے۔ یہیں اسلام کو شان وشوکت نصیب ہوئی، اور یہ اسلام کا پہلا دارالخلافہ ہے۔ آپ aکا روضۂ مبارک بھی یہیں ہے۔ قرآن مجید میں تین جگہ مدینہ سے یہی مدینہ منورہ مراد ہے اور اس کے علاوہ دوسری جگہوں میں عام بستی اور شہر کے معنی میں ہے ۔